کالم اسداللہ غالب

کیا پاکستانی نوجوانوں کی تقدیر بدل جائے گی…اسداللہ غالب

  • کیا پاکستانی نوجوانوں کی تقدیر بدل جائے گی…اسداللہ غالب پاکستان ایشیا کا دوسرا ملک ہے جس کی 68فیصد آبادی تیس برس سے کم عمر کے نوجوانوں پر مشتمل ہے۔ نوجوان کسی بھی ملک کی ریڑھ کی ہڈی ہوتے ہیں۔ یہ ملکی معیشت کو تیزی سے آگے بڑھانے کے لئے ٹیکنالوجی کا بہترین استعمال کر سکتے […]

  • اندازِ جہاں از اسد اللہ غالب

    مودی کے انتخابی دعوے مگر کارکردگی ٹائیں ٹائیں فش۔۔(آخری قسط)….اسد اللہ غالب

    مودی کے انتخابی دعوے مگر کارکردگی ٹائیں ٹائیں فش۔۔(آخری قسط)….اسد اللہ غالب جس تیزی کے ساتھ بھارت میں آبادی دیہات سے شہروں میں منتقل ہو رہی ہے اس سے روزگار کے ساتھ ساتھ بچوں کی معیاری تعلیم کا مسئلہ بھی سنگین ہوا ہے اور مودی حکومت اس کے حل میں بھی بری طرح ناکام ہوئی […]

  • اندازِ جہاں از اسد اللہ غالب

    معیشت کے حوصلہ افزا اعشاریئے اور اشارے…اسداللہ غالب

    معیشت کے حوصلہ افزا اعشاریئے اور اشارے…اسداللہ غالب جب لوگ اس غلط فہمی میں مبتلا تھے کہ لانگ مارچ کی وجہ سے حکوت کا کاؤنٹ ڈاؤن شروع ہو چکا تو حکومت کی پس پردہ معاشی اور مالیاتی حکمت عملی برگ و بار لا رہی تھی۔ پاکستان دنیا کی اسٹاک مارکیسٹس میں نئے اعزاز سے سرفراز […]

  • اندازِ جہاں از اسد اللہ غالب

    پاک فوج لانگ مارچ کے نشانے پر…اسد اللہ غالب

    پاک فوج لانگ مارچ کے نشانے پر…اسد اللہ غالب لانگ مارچ اسلام ا ٓباد میں پڑائو ڈالے بیٹھا ہے ۔اس کاایک بڑا جلسہ ہو چکا ہے۔ اس میں بلاول اور مولانا کی تقریروں میں کھل کر پاک فوج کو تنقید اور تضحیک کا نشانہ بنایا گیا۔ بلاول نہیں جانتا کہ جس فوج کا وہ ناقدہے […]

  • پی سی ا ٓئی اے کے مبصرتنویر نذیر نے امریکہ میں کیا دیکھا…اسد اللہ غالب

    پی سی ا ٓئی اے کے مبصرتنویر نذیر نے امریکہ میں کیا دیکھا…اسد اللہ غالب پی سی آئی اے کی حیثیت ایک غیر رسمی تھنک ٹینک کی سی ہے۔ اس کا کوئی رسمی ڈھانچہ نہیں مگر یہ پینتیس برسوں سے سرگرم عمل ہے۔ اس کے اجلاس ہر ویک اینڈ پر ہوتے ہیں اور ہم خیال […]

  • اندازِ جہاں از اسد اللہ غالب

    پاک بھارت اقدامات۔ اتفاقات ہیں زمانے کے…اسد اللہ غالب

    پاک بھارت اقدامات۔ اتفاقات ہیں زمانے کے…اسد اللہ غالب ایک قصہ ہے سمجھنے کا نہ سمجھانے کا۔ ایک مرتبہ عاصمہ جہانگیر نے اعلی ججوں کے فیصلوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ یوں لگتا ہے کہ ایک بنچ میں شامل تما م جج ایک دوسرے کی جڑواں بہنیں ہیں۔جو ایک سوچتی ہے، وہی دوسری […]